سینٹرل ڈیپوٹیشن ہمارے ملک میں وفاقی ڈھانچے کا حصہ ،مرکزی حکومت کے ساتھ تعاون کریں

by WebDesk
0 comment 70 views
سینٹرل ڈیپوٹیشن ہمارے ملک میں وفاقی ڈھانچے کا حصہ ،مرکزی حکومت کے ساتھ تعاون کریں

ریاستی حکومتیں آئی اے ایس اور دیگر آل انڈیا سرویس افسران کے سینٹرل ڈیپوٹیشن کو سہولت فراہم کریں/ڈاکٹر جتیندر سنگھ
سرینگر /28ستمبر / سی این آئی یاستی حکومتوں پر آئی اے ایس اور دیگر آل انڈیا سرویسز کے افسران کی مرکزی ڈیپوٹیشن کو سہولت فراہم کرنے کا زور دیتے ہوئے مرکزی وزیر مملکت سائنس اور ٹیکنالوجی ڈاکٹر جتیندر سنگھ نے کہا کہ سینٹرل ڈیپوٹیشن ہمارے ملک میں وفاقی ڈھانچے کا حصہ ہے اور ریاستی حکومتوں پر زور دیاسینٹرل ڈیپوٹیشن ہمارے ملک میں وفاقی ڈھانچے کا حصہ ،مرکزی حکومت کے ساتھ تعاون کریں
ریاستی حکومتیں آئی اے ایس اور دیگر آل انڈیا سرویس افسران کے سینٹرل ڈیپوٹیشن کو سہولت فراہم کریں/ڈاکٹر جتیندر سنگھ
سرینگر /28ستمبر / سی این آئی یاستی حکومتوں پر آئی اے ایس اور دیگر آل انڈیا سرویسز کے افسران کی مرکزی ڈیپوٹیشن کو سہولت فراہم کرنے کا زور دیتے ہوئے مرکزی وزیر مملکت سائنس اور ٹیکنالوجی ڈاکٹر جتیندر سنگھ نے کہا کہ سینٹرل ڈیپوٹیشن ہمارے ملک میں وفاقی ڈھانچے کا حصہ ہے اور ریاستی حکومتوں پر زور دیا کہ وہ مرکزی حکومت کے ساتھ تعاون کریں۔ سی این آئی مانیٹرنگ ڈیسک کے مطابق پرسنل، جنرل ایڈمنسٹریشن اور انتظامی اصلاحات کی دیکھ بھال کرنے والی ریاستوں/ مرکز کے زیر انتظام علاقوں کے پرنسپل سکریٹریوں کی سالانہ کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے مرکزی وزیر مملکت سائنس اور ٹیکنالوجی ڈاکٹر جتیندر سنگھ نے کہا کہ سینٹرل ڈیپوٹیشن ہمارے ملک میں وفاقی ڈھانچے کا حصہ ہے اور ریاستی حکومتوں پر زور دیا کہ وہ مرکزی حکومت کے ساتھ تعاون کریں۔ اس حوالے سے خدشات پرانہوں نے کہا، ایک آل انڈیا سروس اافیسر حکومت کا ایک اہم انٹرفیس ہے۔ ڈاکٹر جتیندر سنگھ نے کہا کہ آل انڈیا سروسز کے کیڈر مینجمنٹ کیلئے پہلے سے ہی ایک طے شدہ ڈھانچہ موجود ہے اور اسی پر عمل پیرا ہونے کی ضرورت ہے۔ وزیر نے مزید کہا کہ اس سلسلے میں ایک خاص پہلو مرکز میں آل انڈیا سروس افسران کی تعیناتی ہے۔وزیر نے ریاستی حکومتوں سے تعاون کی درخواست کی تاکہ ان کے پاس زیر التواء تمام جائزوں کو جلد از جلد مکمل کیا جا سکے۔ڈاکٹر جتیندر سنگھ نے بتایا کہ رواں سال کے دوران مرکزی حکومت نے سول سروسز امتحان کے ذریعے 180 آئی اے ایس افسران کو کامیابی کے ساتھ الاٹ کیا ہے اور تقریباً 434 آسامیوں کو ریاستی خدمات سے شامل کرکے بھرتی کے لیے متعین کیا گیا ہے جنہیں جلد ہی پْر کیا جانا ہے۔ وزیر نے کہا کہ وہ ریاستی حکومتوں سے یہ بھی درخواست کریں گے کہ وہ مرکزی حکومت کے ذریعہ وقتاً فوقتاً جاری کردہ آل انڈیا سروسز افسران کی موثر خدمات اور چوکسی کے انتظام سے متعلق رہنما خطوط پر عمل کریں۔ڈاکٹر جتیندر سنگھ نے کہا کہ کووڈ وبائی مرض کے بعد، یہ کانفرنس باہمی تشویش اور دلچسپی کے معاملات پر تبادلہ خیال اور مشغول ہونے کے لیے اہلکاروں کے معاملات کے انچارج ریاستی سکریٹریوں کے ساتھ سالانہ کانفرنسوں کی روایت کا احیاء ہے۔ کہ وہ مرکزی حکومت کے ساتھ تعاون کریں۔ سی این آئی مانیٹرنگ ڈیسک کے مطابق پرسنل، جنرل ایڈمنسٹریشن اور انتظامی اصلاحات کی دیکھ بھال کرنے والی ریاستوں/ مرکز کے زیر انتظام علاقوں کے پرنسپل سکریٹریوں کی سالانہ کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے مرکزی وزیر مملکت سائنس اور ٹیکنالوجی ڈاکٹر جتیندر سنگھ نے کہا کہ سینٹرل ڈیپوٹیشن ہمارے ملک میں وفاقی ڈھانچے کا حصہ ہے اور ریاستی حکومتوں پر زور دیا کہ وہ مرکزی حکومت کے ساتھ تعاون کریں۔ اس حوالے سے خدشات پرانہوں نے کہا، ایک آل انڈیا سروس اافیسر حکومت کا ایک اہم انٹرفیس ہے۔ ڈاکٹر جتیندر سنگھ نے کہا کہ آل انڈیا سروسز کے کیڈر مینجمنٹ کیلئے پہلے سے ہی ایک طے شدہ ڈھانچہ موجود ہے اور اسی پر عمل پیرا ہونے کی ضرورت ہے۔ وزیر نے مزید کہا کہ اس سلسلے میں ایک خاص پہلو مرکز میں آل انڈیا سروس افسران کی تعیناتی ہے۔وزیر نے ریاستی حکومتوں سے تعاون کی درخواست کی تاکہ ان کے پاس زیر التواء تمام جائزوں کو جلد از جلد مکمل کیا جا سکے۔ڈاکٹر جتیندر سنگھ نے بتایا کہ رواں سال کے دوران مرکزی حکومت نے سول سروسز امتحان کے ذریعے 180 آئی اے ایس افسران کو کامیابی کے ساتھ الاٹ کیا ہے اور تقریباً 434 آسامیوں کو ریاستی خدمات سے شامل کرکے بھرتی کے لیے متعین کیا گیا ہے جنہیں جلد ہی پْر کیا جانا ہے۔ وزیر نے کہا کہ وہ ریاستی حکومتوں سے یہ بھی درخواست کریں گے کہ وہ مرکزی حکومت کے ذریعہ وقتاً فوقتاً جاری کردہ آل انڈیا سروسز افسران کی موثر خدمات اور چوکسی کے انتظام سے متعلق رہنما خطوط پر عمل کریں۔ڈاکٹر جتیندر سنگھ نے کہا کہ کووڈ وبائی مرض کے بعد، یہ کانفرنس باہمی تشویش اور دلچسپی کے معاملات پر تبادلہ خیال اور مشغول ہونے کے لیے اہلکاروں کے معاملات کے انچارج ریاستی سکریٹریوں کے ساتھ سالانہ کانفرنسوں کی روایت کا احیاء ہے۔

Related Articles

Leave a Comment

@2022 – Heavenmail.in |  All Right Reserved.